ٹامس کا پانچواں سالانہ جوتوں کے بغیر ایک دن 10 اپریل 2012ء کو منایا جائے گا

دنیا بھر میں لاکھوں کروڑوں بچوں کے لیے اثر انداز ہونا صرف جوتے اتارنے جتنا آسان ہو سکتا ہے

لاس اینجلس، 13 مارچ 2012ء/پی آرنیوزوائر/–

ٹامس منگل 10 اپریل کو اپنے سالانہ جوتوں کے بغیر ایک دن کے موقع پر دنیا بھر سے بغیر جوتوں کے گھروں سے نکلنے کا مطالبہ کرے گا۔ یہ دن ہر سال ٹامس اس حوالے سے شعور اجاگر کرنے کے لیے مناتا ہے کہ جوتوں کی ایک جوڑی ایک بچے کی زندگی پر کیا اثرات مرتب کر سکتی ہے۔ گزشتہ سال دنیا بھر میں 25 سے زائد ممالک میں منعقدہ ایک ہزار سے زیادہ تقریبات میں لوگ بغیر جوتے کے گئے تھے۔

لاکھوں کروڑوں بچے مناسب جوتوں کے بغیر زندگی گزار رہے ہیں، جو انہیں زخم اور بیماریوں کی زد میں لا رہا ہے۔ ٹامس اس تمہید کے ساتھ قائم ہوا تھا کہ ہر خریدی گئی جوتوں کی جوڑی پر جوتوں کی بالکل نئی جوڑی ضرورت مند بچے کو دی جائے گی۔ ون فار ون ( ٹ م) ون ڈے وِدآؤٹ شوز کو دنیا بھر میں جوتوں کی ضرورت اور اس کے حوالے سے مسائل کی جانب توجہ دلانےکے لیے شروع کیا گیا تھا۔

جوتوں کے بغیر ایک دن کے شرکا تازہ ترین خبریں جاننے، اپنے علاقے میں تقریبات تخلیق کرنے اور شمولیت کے لیے، ایونٹ ٹول کٹ ڈاؤنلوڈ کرنے کے لیے، تصاویر اپلوڈ کرنے اور 10 اپریل پر دیگر افراد کیا کریں گے یہ جاننے کے لیے www.OneDayWithoutShoes.com پر جا سکتے ہیں۔ شرکا نئی ون ڈے وِدآؤٹ شوز موبائل ایپلی کیشن کے ذریعے بھی منسلک رہ سکتے ہیں، جو آئی فون اور اینڈرائیڈ پر دستیاب ہے۔ایپلی کیشن صارفین کو فوری طور پر تصاویر شیئر کرنے، دوستوں کو شرکت پر آمادہ کرنے، ننگے پیر تفریح پر جانے کے لیے لوگوں کو لانے کی خاطر موسیقی فراہم کرنے، ون ڈے وِدآؤٹ شوز مرچنڈائز دیکھنے اور دیگر کاموں کو ممکن بناتی ہے۔

ٹامس کے بانی اور جوتے دینے والے اہم فرد بلیک مائیکوسکی نے کہا کہ “یہ تحریک شعور اجاگر کرنے اور لوگوں سے جوتوں کے بغیر کچھ – بلکہ کچھ بھی – کرنے کا مطالبہ کرنے کے بارے میں ہے۔ ہم اِس سال دنیا بھر کے لوگوں کی شرکت کے آرزومند ہیں۔ تو وہ سب کچھ کیجیے جو آپ عموماً کرتے ہیں – صرف جوتوں کے بغیر اور اس مکالمے کا آغاز کرنے میں مدد دیجیے۔”

ملاحظہ کیجیے: www.OneDayWithoutShoes.com

ٹامس کے بارے میں:

2006ء میں امریکی صحافی بلیک مائیکوسکی کی ارجنٹائن کے ایک گاؤں میں بچوں کے ساتھ دوستی ہوئی اور انہوں نے پایا کہ ان کے پاس اپنے پیروں کو بچانے کے لیے جوتے نہیں ہیں۔ مدد کی خواہش کے ساتھ انہوں نے ٹامس قائم کی، ایسی کمپنی جو خریدے گئے جوتے کے ہر جوڑے کے ساتھ ضرورت مند بچوں کو مفت جوتے دے گی، ایک کے بدلے ایک۔ صرف گزشتہ سال ٹامس ایک جوتوں والی کمپنی سے ایک کے بدلے ایک کمپنی بن گئی، جو جوتوں کے علاوہ ایک اور نئی ضرورت یعنی چشموں کو پورا کر رہی ہے، اور ضرورت مند لوگوں کی نظر بخشنے میں مدد دے رہی ہے۔

رابطہ: ڈوگ پاونسکی از ٹامس، +1-310-566-3170 3194

Leave a Reply